A- A A+
Apr 14 2021 10:07PM :آخری اپ ڈیٹ      اسکرین ریڈر رسائی
٭ سرکار نے سی بی ایس ای کی دسویں کلاس کے امتحان کو منسوخ اور بارہویں کے امتحان کو ملتوی کردیا ہے            ٭ نائب صدر ایم وینکیا نائیڈو اور وزیراعظم نریندرمودی نے ملک میں کووڈ کی صورتحال پر گورنروں اور لیفٹیننٹ گورنروں سے بات چیت کی            ٭ مہاراشٹر میں کووڈ۔19 کی وبا کو پھیلنے سے روکنے کیلئے آج رات سے پندرہ روزہ سخت پابندیاں نافذ کی جارہی ہیں            ٭ مغربی بنگال میں اسمبلی انتخابات کے پانچویں مرحلے کی انتخابی مہم ختم ہوگئی            ٭ قوم نے آج آئین ہند کے اہم معمار باباصاحب ڈاکٹر بھیم راؤ امبیڈکر کو اُن کی 130 ویں یوم پیدائش پر یاد کیا           
خبروں کی جھلکیاں

Dec 12, 2019
11:08AM

وزیر اعظم نریندر مودی نے شہریت ترمیمی بل کو تاریخی فیصلہ قرار دیا

FILE PIC
وزیراعظم نریندرمودی نے راجیہ سبھا میں شہریت ترمیمی بل کے پاس ہوجانے پر خوشی کا اظہار کیاہے۔ جناب مودی نے کہا کہ یہ بھارت کےلئے ایک تاریخی دن ہے اور اس بل کو رواداری اور اخوت کی بھارتی قدروں کے لئے ایک تاریخی فیصلہ قرار دیا۔
 ایک ٹوئٹ میں وزیراعظم جناب مودی نے کہا کہ یہ بل ان بہت سے لوگوں کی مشکلات کو دور کرے گا جنہوں نے کئی سالوں سے ظلم وزیادتیوں کا سامنا کیا ہے۔انہوں نے ان ممبران پارلیمنٹ کا شکریہ ادا کیا جنہوں نے اس بل کے حق میں ووٹ دیا۔
وزیر داخلہ امت شاہ نے کہاکہ اس طرح محروم اور ظلم وزیادتیوں کے شکار کروڑوں لوگوں کے خواب سچ ثابت ہوئے ہیں۔ جناب شاہ نے کہا کہ وہ متاثرہ لوگوں کےلئے تحفظ اور وقار کو یقینی بنانے کےلئے وزیراعظم کے عزم کے لئے ان کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔انہوںنے ان کی حمایت کرنے کےلئے عوام کا بھی شکریہ ادا کیا۔
اطلاعات ونشریات کے وزیر پرکاش جاوڈیکرنے کہا کہ یہ بل بھارت کے پڑوسی ملکوں کی اقلیتوں کو جنہیں مذہبی طور پر ظلم وزیادتیوں کا شکار بنایاگیاہے اب ایک باوقار زندگی فراہم کرے گا۔ایک ٹوئٹ میں جناب جاوڈیکرنے وزیراعظم نریندرمودی اور وزیر داخلہ امت شاہ کا اس تاریخی قدم کےلئے شکریہ ادا کیا۔
دوسری جانب کانگریس صدر سونیاگاندھی نے بل کے پاس ہونے کو بھارت کی تکثریت پر تنگ ذہنیت کی جیت قرار دیاہے۔ایک بیان میں انہوںنے کانگریس کے اس عزم کو دہرایاکہ وہ بی جے پی کی صف بندی کے ایجنڈے کے خلاف اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔
 بل کی مخالفت کرتے ہوئے ٹی ایم سی کے ڈیرک او برن نے الزام لگایا کہ حکومت آسام میں این آر سی کے ذریعے کی گئی اپنی غلطیوں کو چھپانے کےلئے یہ بل لائی ہے۔ شیوسینا کے سنجے راؤت نے بی جے پی پر نکتہ چینی کی اور کہا کہ یہ بل کی مخالفت کرنے والوں کو ملک دشمن قرار دینا صحیح نہیں ہے۔
ڈی ایم کے، کے تروچی شیوا نے الزام لگایاکہ اس بل میں ایک خاص فرقے کو نشانہ بنایاگیاہے۔
بی جے پی کے کارگزار صدر جے پی نڈا نے کہا کہ یہ بل نہایت ضروری تھا کیونکہ پاکستان جیسا پڑوسی ملک اقلیتوں کے مفادات کا تحفظ کرنے میں ناکام ثابت ہوا ہے۔
جے ڈی یو کے آر سی پی نے اپوزیشن پر الزام لگایا کہ اس بل کے نام پر مسلمانوں میں ڈر وخوف پیدا کررہی ہے۔

   متعلقہ خبریں

  لائیو ٹوئٹر فیڈ

موسم کا حال

14 Apr 2021
شہر زیاد ہ سے زیادہoC کم از کم oC
دلی 40.2 20.6
ممبئی 33.2 27.0
چنئی 35.4 27.0
کولکاتہ 40.1 27.4
بنگلور 33.0 21.0