A- A A+
Jul 11 2020 10:01AM :آخری اپ ڈیٹ      اسکرین ریڈر رسائی
وزیر اعظم نریندر مودی نے قابلِ تجدید توانائی کے سیکٹر میں غیر ملکی سرمایہ کاری کا خیرمقدم کیا            ٭ ملک میں کووڈ 19 سے ہونے والی شرحِ اموات گھٹ کر 2 اعشاریہ سات دو فیصد رہ گئی            ٭ آئی آر ڈی اے آئی نے کورونا کَوَچ صحت انشورنس پالیسیوں کا آغاز کرنے کےلئے انشورنس کمپنیوں کو منظوری دی            ٭ ڈبلیو ایچ او نے کووڈ 19 سے نمٹنے کے اقدامات کا جائزہ لینے کیلئے ایک غیر جانب دار پینل قائم کیا            ٭ بھارت کے غیرِ ملکی زرِ مبادلہ کے ذخائر 513 اعشاریہ دو پانچ فیصد ارب ڈالر تک پہنچ گئے           
خبروں کی جھلکیاں

Mar 16, 2020
10:00AM

مدھیہ پردیش کے وزیراعلیٰ آج اسمبلی میں اکثریت ثابت کریں گے

Tweeted by @AIR
مدھیہ پردیش میں کمل ناتھ کی قیادت میں کانگریس سرکار کی سیاسی قسمت کا فیصلہ آج ریاستی اسمبلی میں ہوگا۔ گورنر لال جی ٹنڈن نے وزیراعلیٰ کو ہدایت دی ہے کہ وہ آج اسمبلی میں اعتماد کا ووٹ حاصل کریں۔ جناب ٹنڈن نے کمل ناتھ سے یہ بھی کہا ہے کہ وہ اسمبلی میں گورنر کے خطبے کے فوراً بعد اعتماد کا ووٹ حاصل کریں۔ 
مدھیہ پردیش اسمبلی کا بجٹ اجلاس گورنر کے خطبے کے ساتھ آج صبح گیارہ بجے شروع ہوگا۔ کانگریس کے 22اسمبلی ارکان کے استعفے کی وجہ سے پندرہ ماہ پرانی کمل ناتھ سرکار کے گرنے کا خطرہ ہے۔ کانگریس نے حکومت کے حق میں ووٹ دینے کےلئے اپنے سبھی اسمبلی ممبروں کو ایوان میں موجود رہنے کےلئے وہیپ جاری کیا ہے۔ حکمراں پارٹی کے اسمبلی ممبروں نے ایوان میں اکثریت ثابت کرنے کی خاطر حکمت عملی پر تبادلہ خیال کی غرض سے کل رات وزیراعلیٰ کی رہائش گاہ پر میٹنگ کی تھی۔ بی جے پی نے بھی ایوان میں موجود رہنے کیلئے اپنے اسمبلی ممبروں کو وہپ جاری کیا ہے۔ دوسری جانب باغی کانگریس کے اسمبلی ممبروں نے ایک بار پھر اسمبلی اسپیکر کو اپنے استعفے بھیج دیئے ہیں اور اُن کے استعفے منظور کرنے کی اپیل کی ہے۔ 
اسمبلی کے بجٹ اجلاس کے پہلے ہی دن اکثریت ثابت کی جائے گی۔ لہذا آج اسمبلی میں ہنگامہ ہونے کا امکان ہے۔ در اصل اسمبلی کے آج کے ایجنڈے میں اکثریت ثابت کا ذکر نہیں ہے ۔ اس سلسلے میں تذبذب کی صورتحال برقرار ہے۔ BJPلیڈروں کا کہنا ہے کہ حکومت اکثریت ثابت کرنے سے بچنا چاہتی ہے جبکہ وزیراعلیٰ کمل ناتھ کا کہنا ہے کہ وہ اسمبلی میں اکثریت ثابت کرنے کے لئے تیار ہیں لیکن پہلے بنگلورو سے ارکان اسمبلی کو بھوپال لایا جائے۔ بی جے پی لیڈروں نے بھی گورنر سے بھی اس معاملے کی شکایت کی۔ اس کے بعد گورنر نے وزیراعلیٰ کمل ناتھ کو راج بھون بلا کر ان سے بات کی۔ وہیں گروگرام میں رہ رہے رکن اسمبلی دیر رات بھوپال لوٹ آئے ہیں جبکہ سندھیا خیمے کے باغی کانگریس ارکان اسمبلی کے بھی آج بھوپال آنے کی امید ہے۔
BJP کے سینئر لیڈر نروتم مشرا نے گورنر سے اپیل کی ہے کہ اگر اعتماد حاصل کرنے کے دوران کوئی تکنیکی رکاوٹ پیش آتی ہے تو اکثریت ہاتھ اٹھاکر ثابت کی جا سکتی ہے۔ 

   متعلقہ خبریں

  لائیو ٹوئٹر فیڈ

موسم کا حال

11 Jul 2020
شہر زیاد ہ سے زیادہoC کم از کم oC
دلی 38.3 23.9
ممبئی 31.0 24.0
چنئی 34.2 24.5
کولکاتہ 35.0 28.0
بنگلور 27.0 20.0